داعش کیلیے رضاکاروں کی بھرتی کرنے والے کو 22 سال قید

مفید الفقیہ نے داعش کا پروپیگنڈا سوشل میڈیا پر پھیلایا، ملزم پر جرم

امریکی عدالت نے شام میں داعش میں بھرتی کرنے کی کوشش کا جرم ثابت ہونے پر ایک شہری کو ساڑھے 22 سال قید کی سزا سنادی گئی۔

امریکی  نیو یارک کے شہر روچیسٹر کے 32 سالہ رہائشی مفید الفقیہ کو، دہشت گردوں کو نئے کارندے بھرتی کرنے کر کے دینے کی کوشش کے الزام میں گزشتہ سال دسمبر میں حراست میں لیا گیا تھا، اور پراسیکیورٹرز نے اسے امریکا میں داعش کے لیے بھرتی کرنے کے الزام میں پکڑا جانے والا پہلا شخص قرار دیا تھا۔

پراسیکیوٹرز نے عدالت میں کہا کہ مفید الفقیہ نے داعش کا پروپیگنڈا سوشل میڈیا پر پھیلایا، جبکہ دہشت گردوں کے لیے فنڈز اکٹھا کرنے اور ایف آئی اے کے دو مخبروں کو بھرتی کرکے لڑائی کے لیے شام بھیجنے کی کوشش کی۔

پراسیکیوٹرز کا کہنا تھا کہ مفید الفقیہ نے داعش کے لیے بھرتی کیے جانے والے دونوں افراد کو شام لے جانے کے لیے لیپ ٹاپ اور کیمرا بھی دیا اور انہیں وہاں بحفاظت سفر کرنے کے طریقے بھی بتائے۔


ان کا کہنا تھا کہ الفقیہ نے دونوں افراد کو بحفاظت شام پہنچانے کے لیے یمن میں تیسرے شخص کو 600 ڈالر بھی ادا کیے۔


مفید ایلفگیہ کو اسی دن سزا سنائی گئی جس دن امریکی وزیر خارجہ جان کیری کا ایک بیان میں کہنا تھا کہ داعش مسیحیوں، یزیدیوں اور شیعہ افراد کے قتل عام میں ملوث ہے۔


الفقیہ کو عدالت سے سزا سنائے جانے کے بعد ریاست نیو یارک کے شہر بفیلو کے ایف بی آئی چیف ایڈم کوہن کا کہنا تھا کہ ہم مفید الفقیہ کو اگلی دو دہائیوں کے لیے قید رکھ کر خود کو کسی حد تک محفوظ تو محسوس کریں گے، لیکن اس کے باوجود ملک میں دہشت گردی کا خطرہ مسلسل برقرار رہے گا۔

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!