رئیس ماما نے سانحہ چکرا گوٹھ کی منصوبہ بندی کی تھی

کاشف عرف کاشان نے سانحہ چکرا گوٹھ کی منصوبہ بندی کا راز فاش کردیا

کراچی میں سی ٹی ڈی کے ہاتھوں گرفتار کاشف عرف کاشان نے دوران تفتیش سانحہ چکرا گوٹھ کی منصوبہ بندی کا راز فاش کیا ہے۔

سی ٹی ڈی سول لائن کے ہاتھوں گرفتار ملزم کاشف عرف کاشان نے دوران تفتیش انکشاف کیا ہے کہ سانحہ چکرا گوٹھ کی منصوبہ بندی سیکٹر انچارج رئیس مما نے یونٹ 75 میں 10ساتھیوں کے ساتھ بیٹھ کر کی ۔سانحہ چکرا گوٹھ کا مقصد مخالف لسانی جماعت پر الزام لگانا تھا۔

سانحے سے قبل عاشق چانڈیو کے گھر پر فائرنگ کرکے 2 افراد کو ہلاک کیا تھا۔واقعے میں لسانی جماعت کے 6 کارکنان بھی زخمی ہوئے تھے۔

واردات کے لئے اسلحہ ندیم فنٹر نے دیا جو واپس بھی اسے ہی دیا۔پولیس پر فائرنگ شاہد چھٹا،جنید بلڈوگ، زاکر ٹویا، رئیس مما نے کی۔

شاہد چھٹا، ظہیر فنٹر،طارق کے ساتھ ملکر انسپکٹر انور جعفری عرف کالیا کو قتل کیا۔ملزم نے کورنگی وائی ایریا میں ساتھیوں کے ساتھ ملکر وکیل ملک حسنین کو قتل کیا جبکہ ہزار بھتہ نہ دینے پر ظہیر کے ساتھ ملکر بنگالی تاجر کو قتل کیا۔

فلاحی ادارے کے ملازمین اسرار عرف اسد لاشوں کو ٹھکانے لگاتے تھے گورکن ریاض،رضوان،جاوید، انا الیاس اور سلمان نامعلوم لاشیں دفنا تے تھے۔

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!