بنگلا دیش میں اہم اپوزیشن لیڈر اسرائیلی مشیر سے ملاقات پر گرفتار

اسلم چوہدری بنگلادیش نیشنلسٹ پارٹی جوائنٹ سیکرٹری جنرل ہیں

بنگلا دیش میں ایک اہم لیڈر اپوزیشن لیڈر اسلم چوہدری کو بھارت میں ایک اسرائیلی سیاسی مشیر سے ملاقات اور موجودہ حکومت کے خلاف سازش کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔ 

جرمن ویب سائیٹ کے مطابق بنگلا دیش میں پولیس نے سب سے بڑی اپوزیشن جماعت بنگلادیش نیشنلسٹ پارٹی (بی این پی) کے جوائنٹ سیکرٹری جنرل اسلم چوہدری کو گرفتار کر لیا ہے۔ بنگلا دیش کے پولیس کمشنر عبدالبطین کا صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا، ’’ہم نے اسلم چوہدری کو حکومت کے خلاف سازش کرنے اور بیرون ملک ایک اسرائیلی سیاستدان سے ملنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ ڈھاکا پولیس کے ترجمان معروف حسین کا کہنا تھا کہ وہ چوہدری کے خلاف فوجداری کیس دائر کرنے جا رہے ہیں۔ 

اسلم چوہدری کا تعلق بنگلا دیش کے دوسرے بڑے شہر چٹاگانگ سے ہے اور وہ ملک کے ایک مشہور تاجر بھی ہیں۔ انہوں نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ حکومت کے خلاف کسی بھی سازش کا حصہ نہیں ہیں۔  وہ بھارت کے ایک ذاتی تجارتی دورے پر تھے، جہاں ان کی ملاقات اسرائیلی حکومتی مشیر سے ہوئی تھی۔ 
بنگلا دیش کی موجودہ وزیراعظم شیخ حسینہ اپنے سیاسی اور مذہبی مخالفین کے خلاف کریک ڈاؤن جاری رکھے ہوئے ہیں اور ملک میں پے در پے قتل کی حالیہ وارداتوں کا الزام بھی ملکی اسلام پسندوں پر عائد کیا جاتا ہے۔ گزشتہ ہفتے اس اپوزیشن پارٹی کی سربراہ اور سابق وزیراعظم خالدہ ضیاء کے خلاف یہ مقدمات قائم کیے گئے تھے کہ گزشتہ برس حکومت مخالف احتجاج کے دوران سکیورٹی فورسز پر ہونے والے حملوں کے پیچھے ان کا ہاتھ تھا

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!