بھارت میں پارک سے تجاوزات ہٹانا مہنگا پڑ گیا، 24 لاشیں گر گئیں

ریاست کے وزیر اعلی اکھلیش یادو نے اس معاملے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

بھارتی ریاست اتر پردیش کے شہر متھرا میں واقع ایک پارک سے تجاوزات ہٹانے کے دوران ہونے والی جھڑپوں میں 24 افراد ہلاک جب کہ 10 اہلکاروں سمیت 40 زخمی ہوئے ہیں۔

متھرا کا جواہر پارک اس وقت میدان جنگ بنا جب پولیس نے باغ کو غیرقانونی طور پر دو سال سے قابض ایک مذہبی گروپ سے علاقہ واگزار کروانے کے لئے کارروائی کا آغاز کیا۔ جب پولیس پارک خالی کروانے پہنچی تو آزاد بھارت ودھک ویچارک کرانتی ستیاگڑھی نامی تنظیم کے رضاکاروں نے مبینہ طور پر پولیس پر پتھراؤ کیا اور پھر گولی چلا دی۔

جھڑپوں کے دوران اب تک 2 پویس اہلکاروں سمیت 24 افرادہلاک جب کہ 40 سے زائد زخمی ہوچکے ہیں، ہلاک ہونے والوں میں علاقے کا ایس پی بھی شامل ہے۔ ریاست کے وزیر اعلی اکھلیش یادو نے اس معاملے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

اترپردیش پولیس کے سربراہ دلجیت چوہدری نے کہا ہے کہ تین ہزار کے قریب افراد باغ خالی
کروانے کے لیے جانے والے پولیس اہلکاروں کو روکنے کے لیے جمع تھے۔ پولیس پر جب ان افراد کی جانب سے فائرنگ کی گئی تو اہلکاروں نے جواب میں گولی چلائی۔ کچھ افراد پولیس کی فائرنگ سے مارے گئے جبکہ 11 افراد کی ہلاکت کی وجہ گیس سیلنڈروں سے لگنے والی آگ تھی۔

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!