چاہ بہار بندرگاہ کے بعد افغان انڈیا دوستی ڈیم کا افتتاح

نریندر مودی نے 40 برس قبل شروع ہونے والے ’’سلما ڈیم‘‘ کا افتتاح کر دیا

افغانستان کے صوبہ ہرات میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے 40 برس قبل شروع ہونے والے ’’سلما ڈیم‘‘ کا افتتاح کر دیا ہے۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق امریکا اور اس کے نیٹو اتحادیوں کے بعد افغانستان کی تعمیر نو کے حوالے سے بھارت کلیدی کردار ادا کر رہا ہے۔ نئی دہلی حکومت نے افغانستان میں تقریباﹰ دو ارب ڈالر مالیت کے منصوبے مکمل کیے ہیں۔ سلما ڈیم کی تعمیر کا منصوبہ 40 برس قبل شروع کیا گیا تھا لیکن افغانستان میں خانہ جنگی اور بدامنی اس منصوبے کی راہ میں رکاوٹ بنے رہے تاہم اب یہ منصوبہ مکمل ہوگیا ہے۔ اس منصوبے پر30 کروڑ ڈالر لاگت آئی ہے۔ 

بهارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے گزشتہ چھ ماہ کے اندر اندر افغانستان سے منسلک تین بڑے منصوبوں کا افتتاح کیا ہے، جو محض دو طرفہ نہیں بلکہ علاقائی اہمیت کے حامل سمجهے جاتے ہیں۔ ان میں افغان پارلیمان کی نئی عمارت کی تعمیر، چاہ بہار بندر گاہ اور اب سلما ڈیم کا منصوبہ شامل ہیں۔
منصوبے کا افتتاح کرنے کے بعد اپنے خطاب میں مودی نے کہا کہ سلما ڈیم کا یہ منصوبہ آس پاس کے علاقوں میں صرف روشنی اور خوشحالی ہی نہیں لائے گا بلکہ یہ منصوبہ افغانستان کے بہتر مستقبل سے وابستہ امید اور اعتماد کی علامت بھی ہے۔ بھارتی وزیراعظم نے افغان انڈیا دوستی ڈیم کی تعریف کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ افغان عوام نے دہشت اور تباہی پھیلانے والی قوتوں پر واضح کردیا ہے کہ انہیں غالب ہونے نہیں دیا جائے گا، ’’بھارت کو افغانستان کے ساتھ اپنی دوستی پر فخر ہے، افغانستان میں ہم جمہوریت کی جڑیں مضبوط، لوگوں میں اتحاد اور معیشت میں بہتری دیکهنا چاہتے ہیں۔‘‘

دوسری جانب افغان صدر اشرف غنی نے سلما ڈیم منصوبے کے افتتاح سے قبل بھارتی وزیر اعظم کی افغانستان کے لیے خدمات کے اعتراف میں ان کو ملک کا سب سے بڑا سویلین اعزاز ’’شاہ امان اللہ خان ایوارڈ‘‘ سے بھی نوازا

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!