آخر اس مرتبہ ایرانی مسلمان بھی حج کریں گے

ایران کے عازمین کی وجہ سے پاکستان کا کوٹہ کم تو نہیں ہوگا

سعودی عرب اور ایران کے درمیان عازمین حج سے متعلق معاملات طے پا گئے ہیں جس کے تحت رواں برس ایرانی عازمین کوٹے کے مطابق حج کرسکیں گے۔ 

گزشتہ برس  تہران میں سعودی سفارت خانے پر ایرانی مظاہرین کے حملے کے بعد سعودی حکومت نے ایران کا سفارتی بائیکاٹ کردیا تھا۔ جس کے باعث پہلی مرتبہ ایران کے ہزاروں عازمین حج پر نہیں آسکے تھے تاہم اب یہ مسئلہ حل ہوگیا ہے۔   

سعودی عرب میں حج اور عمرے کی وزارت نے ایرانی حج مشن کے ساتھ مل کر رواں سال 1438 کے حج سیزن میں ایرانی عازمین حج کی شرکت کے لیے تمام تر ضروری انتظامات مکمل کر لیے ہیں۔ یہ انتظامات مختلف اسلامی ممالک کے ساتھ اقدامات کے مطابق عمل میں آئے ہیں۔ 

سعودی عرب کے وزیر برائے حج و عمرہ ڈاکٹر محمد بنتن نے ایرانی حج مشن کے سربراہ حمید محمد اور ان کے ساتھ آئے ہوئے وفد سے ملاقات کی۔ ملاقات میں رواں سال مناسک حج کی ادائیگی کے لیے ایرانی عازمین حج کے امور کے انتظامات اُسی نہج پر زیر بحث آئے جس طرح دیگر تمام اسلامی ممالک کے لیے مقرر ہیں۔

واضح رہے کہ رواں برس پاکستان سے ایک لاکھ 79 ہزار سے زائد عازمین حج کریں گے لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے  تاہم سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا ایران کے عازمین کی وجہ سے پاکستان کا کوٹہ کم تو نہیں ہوگا۔ 

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!