آم کھانے والوں کو اس کی پہچان بھی ہونی چاہیے

آم کو پھلوں کا بادشاہ کہا جاتا ہے

آم کو پھلوں کا بادشاہ کہا جاتا ہے ۔ پاکستان کے علاوہ ڈنمارک ، فلپائن ، ملائیشیا، سری لنکا، فلوریڈا، ویسٹ انڈیز اور برازیل میں بھی آم بڑے رقبے پر کاشت کیا جاتا ہے لیکن دنیا بھر کے زرعی ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ پاکستان میں پیدا ہونے والا آم دنیا میں سب سے میٹھا آم ہے.
Image result for pakistani mangoes
ہمارے ملک میں 110 اقسام کے آم پیدا ہوتے ہیں۔ جنمیں چونسا، دسہری، لنگڑا، انور رٹول، سندھڑی، فجری، سرولی، بنگن پلی،الفانسو، محمدوال اور نیلم کو نمایاں اہمیت حاصل ہے۔ 
 پاکستان میں تقریبا ً4لاکھ 19ہزار ایکڑ رقبے پر آم کے باغات ہیں، جن شہروں میں آ م کی پیداوارسب سے زیادہ ہے ان میں ملتان ، رحیم یار خان، مظفر گڑھ ، خانیوال اور بہاولپور شامل ہیں۔پاکستان میں آم کی سالانہ پیداوار تقریباً 18 ہزارلاکھ ٹن ہے۔ 
Image result for pakistani mangoes chaunsa
دسہری لمبااوراس کا چھلکا باریک اور گودے کے ساتھ چمٹاہوا ہوتا ہے۔سندھڑی سائزمیں بڑااورچھلکا زرد، چکنا باریک گودے کیساتھ ہوتا ہے۔ چونسے کا ذائقہ تو اپنی مثال آپ ہے یہ پھلوں کے بادشاہ آم کی سب سے اعلیٰ نسل ہے جو دنیا بھر میں بہت شہرت رکھتی ہے چونسا کا چھلکا تھوڑا موٹا ہوتا ہے یہ آم بہت خوشبودار اور شیریں ہوتا ہے ۔لنگڑا آم مختلف سائز کا ہوتا ہے، اس کا چھلکا بے حد پتلاہوتا ہے۔ انور رٹول سائز میں درمیانہ اور اس کاچھلکا سبزی مائل زرد رنگ کا ہوتا ہے۔ آموں کی یہ قسم بے ریشہ، ٹھوس اور نہایت شیریں اور خوشبودار ہوتی ہے، اس میں رس درمیانہ ہوتا ہے۔

Related image

پاکستان میں پیدا ہونے والے آموں میں کھٹے آم بھی شامل ہیں جنہیں اچار ، جام اور مختلف اقسام کی چٹنیوں کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔آم کو پلپ کی شکل میں محفوظ کرنے کے لئے بھی کئی کمپنیاں کام کر رہی ہیں ،اس پلپ کو آف سیزن میں جوس اور آم کی کمرشل پروڈکٹس بنا نے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!