یوسف یوحنا سے محمد یوسف بننے کی کہانی

1994 میں یوسف بہاولپور میں رکشہ چلانے لگے تھے

क्रिकेट छोड़ चलाने लगा था रिक्शा, 1 हार से बर्बाद हुआ इस क्रिकेटर का करियर, sports news in hindi, sports news

 محمد یوسف نے لاہور میں ایک غریب عیسائی خاندان میں آنکھ کھولی۔

क्रिकेट छोड़ चलाने लगा था रिक्शा, 1 हार से बर्बाद हुआ इस क्रिकेटर का करियर, sports news in hindi, sports news

ان کے والد ریلوے اسٹیشن میں کام کرتے تھے جس کی وجہ سے انہیں ریلوے کالونی میں کوارٹر بھی ملا تھا۔ ان کا بچپن اور نوجوانی ویسے ہی گزری جیسی پاکستان میں ایک غریب گھرانے کے بچوں کی گزرتی ہے۔ بچپن ہی سے اپنا پاپی پیٹ پالنے کے لیے وہ درزی کی دکان پر کام کرنے لگے تھے۔ ان کے پاس بیٹ خریدنے تک کے پیسے نہیں تھے لیکن شوق کا مول نہیں ہے۔ وہ اٌپنے بھائی کے ساتھ لکڑی کو بیٹ بناکر کبھی پلاسٹک اور کبھی ٹینس بال سے کھیلتے۔ 

क्रिकेट छोड़ चलाने लगा था रिक्शा, 1 हार से बर्बाद हुआ इस क्रिकेटर का करियर, sports news in hindi, sports news

1990 میں لاہور میں کرکٹ میچ کھیلتے ہوئے ایک مقامی کلب نے انہیں اپنی ٹیم میں شامل کرنے کی پیشکش کی کیونکہ ان کے پاس کھلاڑی ہی پورے نہیں تھے۔ غربت سے تنگ ۤکر انہوں نے کرکٹ کو خیرباد کہا اور بہاولپور میں رکشہ چلانے لگے، کچھ عرصہ بعد وہ دوبارہ میدان میں اترے اور پھر انہوں نے پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا۔ 

क्रिकेट छोड़ चलाने लगा था रिक्शा, 1 हार से बर्बाद हुआ इस क्रिकेटर का करियर, sports news in hindi, sports news

2001 کے بعد قومی ٹیم کے لیجنڈ اوپنر سعید انور اپنی پرانی روش کو چھوڑ کر راہ راست پر آئے تو ان کی دیکھا دیکھی کئی دوسرے کھلاڑیوں میں بھی دین کی محبت جاگی، جنہوں نے یوسف یوحنا کو محمد یوسف بنایا۔ 2005 میں انہوں نے باقاعدہ طور پر اسلام قبول کیا۔ اللہ سے قربت کے بدلے انہیں اپنے کونی رشتوں کو چھوڑنا پڑا۔ ان کی والدہ نے اس بارے میں کہنا تھا کہ جب اس نے جمعہ کو مسجد میں نماز پڑھی، تب ہمیں اس کے اس قدم کے بارے میں پتہ چلا۔ یہ ہمارے لئے بہت برا جھٹکا تھا  تھا، یوسف نے جو کیا ہے، اس کے بعد میں اسے اپنا نام بھی نہیں دینا چاہتی۔ 
क्रिकेट छोड़ चलाने लगा था रिक्शा, 1 हार से बर्बाद हुआ इस क्रिकेटर का करियर, sports news in hindi, sports news
ایک جانب ان کے گھر والوں نے یوسف سے قطع تعلق کرل؛یا تھا تو دوسری جانب کرکٹ کے میدانوں میں ان کا طوطی بولنے لگا، 2006 میں انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی بیٹنگ سے سب کو حیران کر دیا تھا. اس سال انہوں نے 11 ٹیسٹ میچ میں 9 سے سنچریاں اور 3 نصف سنچرياں بنائیں اور انہوں نے  99.33 کے اوسط سے 1788 رن بنائے تھے.- ایک کیلنڈر ایئر میں سب سے زیادہ ٹیسٹ رنز بنانے کا یہ ریکارڈ آج بھی ان کے نام ہے۔ انٹرنیشنل کرکٹ سے دور ہونے کے بعد اب  وہ بطور کرکٹ ایکسپرٹ بھی کئی ٹی وی چینلز پر نظر آتے ہیں۔ 

क्रिकेट छोड़ चलाने लगा था रिक्शा, 1 हार से बर्बाद हुआ इस क्रिकेटर का करियर, sports news in hindi, sports news

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!