"سکھ" ٹریفک وارڈن رشوت خوری کے خلاف میدان میں آگیا

ڈی ایس پی صدر سرکل ناجائز تنگ کرتا ہے، گلاب سنگھ شاہین

لاہور ٹریفک پولیس میں واحد” سکھ” ٹریفک وارڈن گلاب سنگھ شاہین ڈی ایس پی ٹریفک صدر سرکل کی مبینہ کرپشن ، اختیارات سے تجاوز اور غلیظ گالیوں سے دلبرداشتہ ہوکر سی سی پی او آفس پہنچ گیا۔

لاہور ٹریفک پولیس  میں  ایک سکھ  جس کا نام گلاب سنگھ شاہین ہے بھی بھرتی ہوا، سکھ اسٹائل کے باعث وہ ٹریفک پولیس میں  کافی مشہور ہے، گلاب سنگھ شاہین نے سی سی پی او لاہور کیپٹن (ر) محمد امین وینس کے دفتر ڈی ایس پی ٹریفک صدر سرکل کے خلاف کرپشن سمیت دیگر کئی الزامات کے تحت درخواست دی ہے ، اس کا کہنا ہے کہ اسے ڈی ایس پی صدر سرکل ناجائز تنگ کرتا ہے، ڈی ایس پی نے کرپشن کا بازار گرم کررکھا ہے، اقبال ٹاون میں  رحیم سٹور پر غلط پارکنگ اس کی آشیر باد سے ہورہی ہے، روٹ نمبر 10 ور 105 کی ویگنوں کا چالان نہیں  کرنے دیا جاتا، نیازی اڈہ اور اس سے ملحقہ شاہراہوں پرغلط پارکنگ کے خلاف کاروائی کرتے ہیں  تو مزکورہ ڈی ایس پی گالیاں دیتا ہے۔

گلاب سنگھ شاہین نے کہا کہ ڈی ایس پی ٹریفک صدر سرکل مختلف پوائنٹوں سے بھتہ لیتا ہے تو ہم چالان کہاں کریں اوراگر چالان کی شرح کم ہو تو غیر حاضری لگا دی جاتی ہے اور بلاجواز تنگ کرتا ہے۔ 

ٹریفک پولیس ذرائع کا کہنا تھا کہ گلاب سنگھ شاہین وارڈن جہاں بھی تعینات ہوتا ہے اپنے متعلقہ افسر ڈی ایس پی کے خلاف کرپشن سمیت دیگر الزامات کی درخواست بازی کرتا رہتا ہے ۔

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!