مودی اور ان کی پاکستانی بہن

کراچی سے تعلق رکھنے والی قمر النسا مودی کی منہ بولی بہن ہیں


بھارتی وزیر اعظم نریندرا مودی کا پاکستان سے کینہ کسی سے چھپا ہوا نہیں ہے لیکن بہت کم لوگوں کو اس بات کا علم ہے کہ ان کی ایک بہن بھی ہے اور وہ بھی پاکستانی۔ 

کراچی سے تعلق رکھنے والی قمر النسا محسن شیخ کی کی 1981 میں بھارتی ریاست گجرات کے ایک نامور مصور محسن شیخ سے شادی ہوئی ۔ شادی کے بعد قمر النسا بھارت چلی گئیں، 1995 میں ان کی اس وقت کے گورنر سروپ سنگھ سے اچھی بات چیت ہوگئی جو اتنی بڑھ گئی کہ سروپ سنگھ ان کا تعارف اپنی بیٹی کہہ کر پکارتے رہے۔ 

1996 میں قمر بیگم اپنے والدین سے ملاقات کے لیے کراچی ۤرہی تھیں تو انہیں چھوڑنے سروپ سنگھ بھی ایئر پورٹ تک چلے آئے، ان کے ہمراہ اس وقت گجرات میں بی جے پی کے سیکریٹری جنرل نریندرا مودی بھی ہولیے۔

اس وقت سروپ سنگھ نے مودی کو کہا کہ قمر میری بیٹی ہے اس کا ہمیشہ خیال رکھنا۔ جس پر مودی جی نے کہا کہ آپ کی بیٹی ہے تو ہماری بہن ہوئی نا۔ وہ دن اور آج کا دن گجرات میں قمر النسا بیگم کا مقام مودی کی بہن جیسا ہے۔ جب وہ گجرات کے وزیر اعلیٰ تھے تو کسی اجازت کے بغیر ہی وزیر اعلیٰ ہاؤس پہنچ جایا کرتی تھیں ، قمر بیگم کو اپنے بھائی سے بے دھڑک پہنچ جایا کرتی تھیں۔ 

قمر کا کہنا ہے کہ جب تک مودی گجرات کے وزیر اعلی رہے تو انہیں کبھی بھی ان سے ملاقات کے لیے وقت لینے کی ضرورت نہیں پڑتی تھی. تاہم وزیر اعظم بننے کے بعد مودی کی مصروفیت بڑھ گئی اور میں ان راکھی نہیں باندھ پائیں.اس بار بھی میں سوچ رہی تھی نریندرا بھائی مصروف ہوں گے، لیکن دو دن پہلے میرے پاس ان کی کال آئی انہوں نے اس بار رکشا بندھن کے دن مجھے دلی بلایا ہے۔ میں اس سے بہت خوش ہوں.

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!