مرنے کے 141 سال بعد بھی عورت کا جسم ہے صحیح سلامت

دنیا میں ایسے بہت سے معجزات ہوتے رہتے ہیں،

دنیا میں ایسے بہت سے معجزات ہوتے رہتے ہیں، جن کے بارے میں جان کر یا سن کر یقین کرنا مشکل ہو جاتا ہے.

ایک ایسا ہی معاملہ سامنے آیا پیرس میں، جہاں ایک راہبہ  کا مردہ جسم گزشتہ 141 سال سے شیشے کے ایک ڈبے میں صحیح سلامت رکھا ہوا ہے۔ 
عیسائی راہبہ کیتھرین لےبور (Catherine Laboure) 1876 میں 70 سال کی عمر میں وفات پاگئی تھی. اس کے بعد ان کے جسم کو محفوط رکھا دیا گیا تھا. قریب 56 سال بعد 1933 میں جب ان کے جسم کو باہر نکالا گیا تو وہ مکمل طور پر محفوظ تھا. باڈی کو صحیح سلامت دیکھنے کے بعد لوگ حیران تھے اور اسے معجزہ مان رہے تھے. اس کے بعد ان کے جسم کو شیشے کے ایک ڈبے رکھ کر ایک چرچ کے اندر رکھ دیا گیا، جسے دیکھنے کے لئے لوگوں کی بھیڑ لگتی رہتی ہے. 
کہا جاتا ہے کہ کیتھرین جب 9 سال کی تھی تو ان کی ماں کی موت ہو گئی تھی. جب ان کا جنازہ ہو رہا تھا تو کیتھرین حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی والدہ بی ی مریم کے مجسمے سے لپٹ گئیں اور کہا ‘آج سے آپ ہی میری ماں ہیں.’ اسی شام جب وہ چرچ میں بیٹھی تھیں تو انہیں ایک بچے کی آواز سنائی دی. ان کا دعویٰ تھاکہ انہوں نے بی بی مریم کی گود میں موجود بچے کو باقاعدہ چھوا، اس موقع پر بی بی مریم نے ان سے بات بھی کی. اس کے بعد ان کے اندر ایک روحانی طاقت آ گئی اور انہیں احساس ہوا کہ خدا نے انہیں لوگوں کی خدمت کرنے کے لئے بھیجا ہے. کیتھرین کی زندگی یہیں سے بدل گئی اور انہوں نے غریب، کمزور اور مجبور لوگوں کی خدمت کرنے کا فیصلہ کر لیا. اپنی پوری عمر انہوں نے لوگوں کی مدد کی اور اسپتال کھولے 

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!