جیو ، اے آر وائی اور ہم کے ڈراموں میں گندے سین ہیں

قابل اعتراض مواد نشر کرنے پر نوٹس جاری


پیمرا نے جیو انٹرٹینمنٹ، اے آر وائی کمیونیکیشنزاور ہم ٹی وی کو قابل اعتراض اور ناشائستہ مواد نشر کرنے پر نوٹس جاری کردیا۔

پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی نے پاکستان کے تین بڑے نشریاتی ادارے جیو اینٹرٹینمنٹ، اے آر وائی کمیونیکیشنز اور ہم ٹی وی کو تفریحی پروگراموں میں ناشائستہ اور قابل اعترض مواد نشر کرنے پر انتباہ جاری کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ مستقبل میں اس طرح کی کسی خلاف ورزی پر پیمرا قوانین کے تحت کاررائی کی جائے گی۔مذکورہ تینوں ٹی وی چینلز کی انتظامیہ کو جاری الگ الگ وارننگ لیٹرز میں اتھارٹی نے ادارہ جاتی نگران کمیٹیوں کو موثر بنانے اور ان کی تفصیلات پیمرا کو کرنے کی بھی ہدایت کی ہے ،

جیواینٹرٹینمنٹ نے مورخہ 7 اگست 2017 کو ایک ڈرامہ نشر کیا جس میں ناشائستہ اور قابل اعتراض مواد نشر کیا گیا ، چینل کا یہ اقدام نہ صرف پیمرا قوانین اورالیکٹرانک میڈیا ضابطہ اخلاق 2015 کی متعدد شقوں کی خلاف ورزی ہے بلکہ ہمارے معاشرتی ، سماجی و اخلاقی اقدار کے بھی خلاف ہے۔

میسرز آئی ٹیلیوژن لمیٹڈ (ہم ٹی وی)پر مورخہ 21 مئی 2017 کو ناشائشتہ مواد نشر کرنے پر اتھارٹی کی طرف سے اظہار وجوہ نوٹس جاری کیا گیا۔ چینل کی طرف سے داخل جواب کا جائزہ لینے کے بعد اتھارٹی اس نتیجہ پر پہنچی کہ  ہم ٹی وی نے مذکورہ مواد نشر کرکے پیمرا قوانین و ضابطہ اخلاق برائے الیکٹرانک میڈیا 2015 کی متعدد شقوں کی خلاف ورزی کی ہے۔اے آر وائی کمیونیکیشنز کو بھی غیر ملکی ٹی وی چینل ایچ بی او پر مورخہ 10 اپریل 2017 کو قابل اعتراض و ناشائستہ مواد نشر ہونے پر شوکاز نوٹس جاری کیا گیاتھا۔چونکہ ایچ بی اوکے نشریاتی حقوق اے آر وائی کمیونیکیشنز کے پاس ہیں چینل کو متعلقہ مواد نشر ہونے پر جواب داخل کروانے کا حکم دیا گیا تھا تاہم چینل انتظامیہ کی طرف سے داخل جواب کا جائزہ لینے کے بعد پیمرا شنوائی کمیٹی اس نتیجہ پر پہنچی کہ چینل کا مذکورہ اقدام پیمرا قوانین کی خلاف ورزی  کے زمرے میں آتا ہے ۔
پیمرا نے مذکورہ خلاف ورزیوں پر ٹی وی چینلز انتظامیہ کو الگ الگ انتباہ جاری کرتے ہوئے مستقبل میں محتاط رہنے کی ہدایت کی ہے اور خبردار کیا ہے کہ آئندہ اس طرح کی خلاف ورزیوں پر ان کے خلاف پیمرا قوانین کے تحت سخت کارروائی کی جائے گی

تبصرے

  • اس پوسٹ پر تبصرے نہیں ہیں!