ثمینہ راجہ کی شاعری

  • شاید کہ موج عشق جنوں خیز ہے ابھی

  • ہم تو یوں الجھے کہ بھولے آپ ہی اٌپنا خیال

  • آسیب صفت یہ مری تنہائی عجب ہے

  • کب اس سے قبل نظر میں گل ملال کھلا

  • آسیب صفت یہ مری تنہائی عجب ہے

  • کب اس سے قبل نظر میں گل ملال کھلا