کشور ناہید کی شاعری

  • وہ اجنبی تھا غیر تھا کس نے کہا نہ تھا

  • کبھی نظر تو آ، تسکین اضطراب تو دے

  • کچھ دن تو ملال اس کا حق تھا

  • اپنے لہو سے نام لکھا غیر کا بھی دیکھ

  • وداع کرتا ہے دل سطوت رگ جاں کو

  • اپنے لہو سے نام لکھا غیر کا بھی دیکھ