احمد راہی کی شاعری

  • تم تو کہتے تھے بہار آئی تو لوٹ آؤں گا

  • ساون بھادوں نیناں میرے

  • تنہائیوں کے دشت میں اکثر ملا مجھے

  • دن کو رہتے جھیل پر دریا کنارے رات کو

  • غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی

  • غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی

  • دل کے ویران راستے بھی دیکھ

  • کوئی ماضی کے جھروکوں سے صدا دیتا ہے

  • لمحہ لمحہ شمار کون کرے

  • کوئی ماضی کے جھروکوں سے صدا دیتا ہے