اعتبار ساجد کی شاعری

  • تجھے بھلا کے جیوں ایسی بددعا بھی نہ دے

  • جو خیال تھے نہ قیاس تھے وہی لوگ مجھ سے بِچھڑ گئے

  • جو خیال تھے نہ قیاس تھے وہی لوگ مجھ سے بِچھڑ گئے

  • نہ گمان موت کا ہے نہ خیال زندگی کا

  • میں تکیے پر ستارے بورہا ہوں

  • جانے کس چاہ کے کس پیار کے گن گاتے ہو