اختر شیرانی کی شاعری

  • نہ بُھول کر بھی تمنائے رنگ و بُو کرتے

  • یوں تو کس پھول سے رنگت نہ گئی بُو نہ گئی

  • وہ کبھی مِل جائیں تو کیا کیجے

  • وہ کبھی مِل جائیں تو کیا کیجے

  • چاندنی راتوں میں اِک اِک پُھول کو

  • وہ کبھی مِل جائیں تو کیا کیجئے

  • محبت کی دنیا میں مشہور کردوں