ناصر کاظمی کی شاعری

  • یہ شب یہ خیال و خواب تیرے

  • اپنی دھن میں رہتا ہوں

  • نام سے وحشت کبھی ۔۔۔۔۔ ناصر کاظمی

  • رونقیں تھیں جہاں میں کیا کیا کچھ

  • نئے کپڑے بدل کر جاؤں کہاں

  • اس راہ محبت میں تو آزار ملے ہیں

  • تھوڑی دیر کو جی بہلا تھا

  • نئے دیس کا رنگ نیا تھا

  • دھوپ نکلی دن سہانے ہوگئے

  • خواب میں رات ہم نے کیا دیکھا