تنویر انجم کی شاعری

  • سورج سارا شہر ڈراتا رہتا ہے

  • کبھی وہ مثل گل مجھے مثال خار چاہیئے

  • سورج سارا شہر ڈراتا رہتا ہے

  • کبھی وہ مثل گل مجھے مثال خار چاہئیے

  • شہروں کے سارے جنگل گنجان ہوگئے ہیں

  • اظہار جنوں بر سر بازار ہوا ہے

  • کس طرح اس کو بلاؤں خانہ برباد میں